66 فیصد پاکستانی پی ٹی آئی حکومت کی کاکردگی سے مطمئن نہیں: گیلپ سروے | پاکستان

0
33


عوامی آراء جاننے کے حوالے سے معروف ادارے گیلپ پاکستان نے وفاقی اور صوبائی حکومتوں کی کارکردگی کے حوالے سے سروے کے نتائج جاری کر دیے۔

گیلپ پاکستان کا سروے فروری 2020 میں کیا گیا جس کے مطابق 66 فیصد پاکستانی پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) حکومت کی کارکردگی سے مطمئن نہیں جبکہ 32 فیصد مطمئن ہیں۔

سروے میں 59 فیصد کی رائے میں پی ٹی آئی حکومت کی کارکردگی گزشتہ حکومت سے خراب ہے، 22 فیصد کی رائے میں گزشتہ حکومت سے بہتر ہے۔

گیلپ سروے کے مطابق دسمبر 2018 میں 35 فیصد پاکستانیوں کی رائے تھی کہ پی ٹی آئی حکومت کی کارکردگی سابق حکومت سے خراب ہے جبکہ 3 میں سے 2 پاکستانی پاکستان تحریک انصاف کی کارکردگی سے مطمئن نہیں اور ایک مطمئن ہے۔

سروے میں بتایا گیا ہے کہ 62 فیصد پاکستانیوں کی رائے میں ملک غلط سمت میں جا رہا ہے جبکہ 35 فیصد کی رائے میں سمت درست ہے، اگست 2018 میں 34 فیصد پاکستانیوں کی رائے میں ملک کی سمت غلط تھی۔

گیلپ سروے کے مطابق سندھ کے 16 فیصد، بلوچستان کے 13 فیصد ، پنجاب کے 34 فیصد اور خیبر پختونخوا کے 64 فیصد عوام وفاقی حکومت کی کارکردگی سے مطمئن ہیں۔

5 میں سے 3 پاکستانیوں کی رائے میں پی ٹی آئی حکومت کی کارکردگی گزشتہ حکومت سے خراب ہے، ایک کی رائے میں بہتر ہے۔

سروے میں بتایا گیا ہے کہ پی ٹی آئی کے 20 فیصد سپورٹرز وفاقی حکومت کی کارکردگی سے مطمئن نہیں جبکہ مسلم لیگ (ن) کے 90 فیصد اور پیپلز پارٹی کے 89 فیصد مطمئن نہیں۔ 70 فیصد مرد اور 60 فیصد خواتین وفاقی حکومت کی کارکردگی سے مطمئن نہیں۔

گیلپ سروے کے مطابق 30 سال سے کم عمر 66 فیصد افراد جبکہ 50 سال تک کی عمر کے 67 فیصد اور 50 سال سے بڑے 65 فیصد افراد وفاقی حکومت کی کارکردگی سے مطمئن نہیں۔

پنجاب کے 46 فیصد افراد کی رائے میں وزیر اعلیٰ پنجاب کی کارکردگی خراب ہے، 31 فیصد کی رائے میں اچھی ہے جبکہ سندھ کے 62 فیصد کی رائے میں وزیر اعلٰی سندھ کی کارکردگی خراب اور 11 فیصد کی رائے میں اچھی ہے۔

کے پی کے میں 53 فیصد کی رائے میں وزیر اعلیٰ کے پی کے کی کاکردگی اچھی، 26 فیصد کی رائے میں خراب ہے جبکہ بلوچستان کے 76 فیصد کی رائے میں وزیر اعلیٰ بلوچستان کی کارکردگی خراب اور 7 فیصد کی رائے میں اچھی ہے۔

کے پی کے کے 53 فیصد عوام نے وزیر اعلیٰ کے پی کے کی کارکردگی کی مثبت ریٹنگ اور 25 فیصد نے منفی ریٹنگ کی۔ پنجاب کے 31 فیصد افراد نے عثمان بزدار کی کارکردگی کی مثبت اور  46 فیصد نے منفی ریٹنگ کی۔

سندھ کے 12 فیصد عوام نے مراد علی شاہ کی کارکردگی کی مثبت ریٹنگ اور 62 فیصد عوام نے منفی ریٹنگ کی۔ بلوچستان کے 7 فیصد عوام نے جام کمال کی کاکردگی کی مثبت ریٹنگ، 77 فیصد نے منفی ریٹنگ کی۔

گیلپ سروے کے مطابق پی ٹی آئی کے 73 فیصد سپورٹرز کی رائے میں ملک کی سمت درست ہے جبکہ 26 فیصد کی رائے میں درست نہیں۔

مسلم لیگ ن کے 25 فیصد اورپی پی پی کے 10 فیصد کی رائے میں ملک کی سمت درست ہے جبکہ مسلم لیگ (ن) کے 75 فیصد سپورٹرز اور پی پی پی کے 89 فیصد سپورٹرز کی رائے میں ملک کی سمت غلط ہے۔





Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here