HomeUncategorizedایٹمی ہتھیار کبھی بھی استعمال نہیں ہوئے چاہیے، جو بائیڈن اور چینی...

ایٹمی ہتھیار کبھی بھی استعمال نہیں ہوئے چاہیے، جو بائیڈن اور چینی صدر کا اتفاق


امریکی صدر جو بائیڈن اور چین کے صدر شی جن پنگ نے سوموار کو ہونے والے بات چیت میں اتفاق کیا کہ ایٹمی ہتھیار کبھی بھی اور بشمول یوکرین کہیں بھی استعمال نہیں ہونے چاہیے۔
خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق وائٹ ہاؤس کا ایک بیان میں کہنا تھا کہ صدر بائیڈن اور صدر شی نے اس اتفاق کو دہرایا کہ ایٹمی جنگ کبھی بھی نہیں ہونی چاہیے اور نہ ہی جیتا جانا چاہیے۔
بیان کے مطابق دونوں صدور نے یوکرین جنگ میں ایٹمی ہتھیاروں کے استعمال یا استعمال کی دھمکی کے خلاف اپنی پوزیشن کو واضح کیا۔
توقع تھی کہ بائیڈن کی جانب سے عہدہ سنبھالنے کے بعد صدر شی کے ساتھ جی 20 سربراہی اجلاس کے سائیڈ لائن پر پہلی بالمشافہ ملاقات ملاقات میں یوکرین جنگ موضوع گفتگو رہے گا۔
ملاقات کے شروع میں دونوں صدور نے ہاتھ ملایا جس کے دوران صڈر بائیڈن نے کہا کہ سپرپاورز کی ذمہ داری ہے کہ دنیا کو دکھائیں کہ  وہ اپنے اختللافات کو سنبھال سکتے ہیں اور آپس کے مقابلے کو تنازع میں تبدیل ہونے سے روک سکتے ہیں۔
وائٹ ہاؤس کے بیان کے مطابق صدر بائیڈن نے چینی صدر کو بتایا کہ امریکہ چین کے ساتھ بھرپور مقابلہ جاری رکھے گا ’لیکن یہ مقابلہ ہرگز تنازعے میں تبدیل نہیں ہونا چاہیے۔‘
وائٹ ہاؤس کا کہنا ہے کہ صدر بائیڈن نے چین کی جانب سے تائیوان کے خلاف ’بڑھتے ہونے جارحانہ اقدامات‘ پر اعتراض کیا۔
صدر بائیڈن کی چینی ہم منصب کے ساتھ ملاقات تین گھنٹے تک جاری رہی۔
امریکی صدر نے اپنے ہم منصب کو بتایا کہ دنیا کو شمالی کوریا کی حوصلہ افزائی کرنا چاہیے کہ وہ ’ذمہ درانہ طرف عمل‘ اپنائیں۔





Source link

RELATED ARTICLES

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

Recent Comments