HomeUncategorizedSupreme court hate speech plea central and state government imt

Supreme court hate speech plea central and state government imt


نفرت پھیلانے والی تقریروں پر سپریم کورٹ نے مرکز اور ریاستی سرکاروں سے کیا جواب طلب، جانئے پورا معاملہ

نفرت پھیلانے والی تقریروں پر سپریم کورٹ نے مرکز اور ریاستی سرکاروں سے کیا جواب طلب، جانئے پورا معاملہ

عرضی گزار شاہین عبداللہ نے مرکز اور ریاستی سرکاروں کو ملک بھر میں نفرت پھیلانے والے جرائم اور اشتعال انگیز تقریروں کے واقعہ کی آزادانہ، قابل اعتماد اور غیر جانبدارانہ جانچ شروع کرنے کی ہدایت دینے کی مانگ کو لے کر عدالت عظمی کا رخ کیا ہے ۔

  • News18 Urdu
  • Last Updated :
  • Delhi | New Delhi | New Delhi
نئی دہلی : سپریم کورٹ نے مسلم کمیونٹی کے خلاف نفرت پھیلانے والی تقریروں پر روک لگانے کیلئے بڑا قدم اٹھائے جانے کی ہدایت دئے جانے کی مانگ کررہی عرضی پر جمعرات کو مرکز اور ریاستوں سے جواب طلب کیا ۔ جسٹس اجے رستوگی اور جسٹس سی ٹی روی کمار کی بینچ نے ایک دیگر بینچ کے سامنے زیر التوا ایسی ہی عرضیوں کو ساتھ میں جوڑتے ہوئے مرکزی سرکار اور سبھی ریاستوں کو نوٹس جاری کیا ۔

عرضی گزار شاہین عبداللہ نے مرکز اور ریاستی سرکاروں کو ملک بھر میں نفرت پھیلانے والے جرائم اور اشتعال انگیز تقریروں کے واقعہ کی آزادانہ، قابل اعتماد اور غیر جانبدارانہ جانچ شروع کرنے کی ہدایت دینے کی مانگ کو لے کر عدالت عظمی کا رخ کیا ہے ۔ عرضی گزار کی جانب سے پیش سینئر وکیل سبل سبل نے شروعات میں دلیل دی کہ اس مسئلہ سے نمٹنے کیلئے کچھ کئے جانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ نفرت پھیلانے والی تقریر کرنے یا ایسے جرائم میں ملوث لوگوں کے کلاف کارروائی کی جانی چاہئے ۔

 

یہ بھی پڑھئے: کیا یوپی میں پاپولیشن پالیسی لاسکتے ہیں یوگی؟ آر ایس ایس سربراہ سے ہوئی گفتگو

یہ بھی پڑھئے : دہلی پٹاخہ پابندی: سپریم کورٹ نے کہا : صاف ہوا میں سانس لینے دو، پیسہ میٹھائی پر خرچ کرو

بینچ نے کہا کہ عرضی میں کہا گیا ہے کہ درخواست بہت واضح ہے اور اس میں کسی خاص مثال کا تذکرہ نہیں کیا گیا ہے ۔ عدالت نے کہا کہ جہاں کسی معاملہ میں کیس درج کیا گیا ہے، وہاں نوٹس لیا جاسکتا ہے ۔ سبل نے حالانکہ دلیل دی کہ عرضی میں کی گئی اپیل واضح نہیں ہے ، اس کے ساتھ ہی انہوں نے حال ہی میں کی گئی کچھ نفرت آمیز تقریروں کا تذکرہ بھی کیا ۔

انہوں نے کہا کہ اسے جرائم کو روکنے کیلئے پچھلے چھ مہینوں میں کئی عرضیاں داخل کی گئی ہیں، لیکن ایسے واقعات اب بھی جاری ہیں ۔ اپنی عرضی میں عبداللہ نے یو اے پی اے اور دیگر سخت بندوبست کو لاگو کرنے کی بھی مانگ کی ہے، تاکہ نفرت پھیلانے والی تقریروں پر لگام لگایا جاسکے ۔

Published by:Imtiyaz Saqibe

First published:



Source link

RELATED ARTICLES

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

Recent Comments