پاکستان کی مدد کے بغیر امریکا طالبان امن معاہدہ ممکن نہ تھا: شاہ محمود | پاکستان

0
34


 پاکستان کی مدد کے بغیر امریکا طالبان امن معاہدہ ممکن نہ تھا: شاہ محمود—فوٹو فیس بک

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ امریکا اور افغان طالبان کے درمیان تاریخی امن معاہدہ پاکستان کی مدد کے بغیر ممکن نہ تھا۔

دوحہ میں جیو نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ معاہدے میں کوئی سقم نہیں، یہ معاہدہ 5 منٹ میں نہیں ڈیڑھ سال میں طےہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ دنیا میں جو بھی دہشت گردی ہوتی ہے اس کی ساری ذمہ داری طالبان پر نہیں ڈالی جا سکتی، اب افغان طالبان اپنی سر زمین کو کسی ملک کے خلاف استعمال نہیں ہونے دیں گے۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ امریکی ہم منصب سمیت دوسرے ملکوں نے پاکستان کے کلیدی کردار کو سراہا کیونکہ پاکستان کے بغیر یہ دن ممکن نہ تھا، پاکستان کے کردار کو دنیا نے تسلیم کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے سب کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں، امریکا کے ساتھ بھی اچھے تعلقات ہیں جس کا اعتراف امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھارت کی سرزمین پر بھی کیا ہے۔

افغان صدر اشرف غنی سے متعلق سوال پر وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ اشرف غنی پاکستان کی اہمیت سے غافل تھے نہ ہیں، ملا بردار نے بھی خطاب میں پاکستان کا تذکرہ کیا، ہر شخص کی اپنی اہمیت، اپنا کردار اور وجود ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ماضی میں اعتماد کا فقدان تھا لیکن آج پاکستان میں سول اور ملٹری لیڈرشپ ایک صفحے پر ہیں۔ 

واضح رہے کہ گزشتہ روز قطر میں امریکا اور افغان طالبان کے درمیان 18 سالہ طویل جنگ کے خاتمے کے لیے تاریخی امن معاہدے پر دستخط ہوئے تھے۔

دوحہ معاہدے کے تحت افغانستان سے امریکی اور نیٹو افواج کا انخلا آئندہ 14 ماہ کے دوران ہوگا جب کہ اس کے جواب میں طالبان کو ضمانت دینی ہے کہ افغان سر زمین القاعدہ سمیت دہشت گرد تنظیموں کے زیر استعمال نہیں آنے دیں گے۔





Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here