وزیراعظم کی ایرانی سپریم لیڈر سے ملاقات صدر رئیسی کی شہادت پر اظہارِ تعزیت

(24 نیوز) وزیراعظم نے تہران میں ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ امام خامنہ ای سے ملاقات کی اور صدر رئیسی کی المناک ہیلی کاپٹر حادثے میں شہادت پر اظہارِ تعزیت کیا۔

وزیر اعظم محمد شہباز شریف نے ایران کے سپریم لیڈر، رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ امام خامنہ ای سے آج تہران میں ملاقات کی، نائب وزیراعظم اور وزیر خارجہ محمد اسحاق ڈار، وفاقی وزیر داخلہ سید محسن نقوی، وفاقی وزیر تجارت جام کمال خان اور وفاقی وزیر اطلاعات عطاء اللہ تارڑ بھی ملاقات کے دوران وزیراعظم کے ہمراہ تھے۔ 

سپریم لیڈر سے ملاقات کے دوران وزیراعظم نے صدر رئیسی اور ان کے ساتھیوں کے المناک انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا، مرحوم صدر رئیسی کے اپریل 2024 میں دورہء پاکستان کو یاد کرتے ہوئے وزیر اعظم نے پاکستان ایران دوطرفہ تعلقات کو مزید مضبوط بنانے میں ان کے قابل تعریف کردار کو اجاگر کیا۔

یہ بھی پڑھیں: سائفر کیس؛ ایف آئی اے پراسیکیوٹر کے دلائل پر چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ کے ریمارکس، اہم سوالات کھڑے کر دیئے

وزیراعظم نے تاریخ کے اس نازک موڑ پر اپنے ایرانی بھائیوں اور بہنوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا۔ انہوں نے برادر ملک ایران کی حکومت اور عوام کے ساتھ دوستی اور بھائی چارے کے رشتوں کو مزید مضبوط بنانے کے لیے پاکستان کے عزم کا اعادہ کیا، وزیراعظم نے ایرانی سپریم لیڈر کو پاکستان کا دورہ کرنے کی بھی دعوت دی۔

 وزیر اعظم نے کہا کہ صدر رئیسی ایک وژنری رہنما تھے جنہوں نے اپنے ملک اور اپنے لوگوں کی خدمت کے لیے ثابت قدمی کا مظاہرہ کیا، ہم  پاک ایران تعلقات کو مزید مستحکم کرنے اور دو طرفہ تجارت کو بڑھانے کے حوالے سے مرحوم ایرانی صدر کے ویژن کو جاری رکھیں گے، امت مسلمہ کے اتحاد اور غزہ کے محصور عوام کے لیے صدر رئیسی کی خدمات تاریخ میں لکھی جائیں گی۔

دوسری جانب ایرانی سپریم لیڈر کا کہنا تھا کہ ہم اس مشکل گھڑی میں پاکستان کی حکومت اور عوام کی طرف کئے گئے جذبات کے اظہار کو محسوس کرتے ہیں اور شکریہ ادا کرتے ہیں، ہم پاکستان کے ساتھ اپنے تعلقات کو بہیت زیادہ اہمیت دیتے ہیں اور ہم پاک ایران تعلقات کے حوالے سے مرحوم ایرانی صدر رئیسی کے وژن کو آگے بڑھائیں گے۔

بعد ازاں وزیر اعظم محمد شہباز شریف نے 19 مئی کو ہیلی کاپٹر حادثے میں شہید ہونے والے ایران کے مرحوم صدر ڈاکٹر سید ابراہیم رئیسی، ایران کے مرحوم وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہ اور ان کے رفقاء کے لئے منعقدہ یادگاری تقریب میں شرکت کی، نائب وزیراعظم اور وزیر خارجہ محمد اسحاق ڈار، وفاقی وزیر داخلہ سید محسن نقوی، وفاقی وزیر تجارت جام کمال خان، وفاقی وزیر اطلاعات عطاءاللہ تارڑ اور وزیر اعظم کے معاون خصوصی طارق فاطمی بھی وزیراعظم کے ہمراہ تھے۔ 

تقریب کے دوران وزیراعظم اس ہال میں بھی تشریف لے گئے جہاں مرحوم ایرانی صدر کا جسد خاکی رکھا گیا تھا، وزیراعظم نے مرحوم صدر کے بلندیءدرجات کے لئے دعا کی، انہوں نے مرحوم ایرانی صدر کی ایرانی عوام کی ترقی و خوشحالی، پاک-ایران تعلقات کے فروغ اور خطے کے لئے خدمات پر انہیں شاندار خراج عقیدت پیش کیا۔

وزیر اعظم محمد شہباز شریف نے ایران کے قائم مقام صدر ڈاکٹر محمد مخبر سے پاکستان کی حکومت اور عوام کی جانب سے تعزیت کا اظہار کیا، اس موقع پر وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان کی حکومت اور عوام کو اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر ڈاکٹر سید ابراہیم ریئسی اور ایرانی وزیر خارجہ جناب حسین امیر عبداللہیان اور ان کے دیگر رفقاءکی المناک حادثے میں شہادت کی خبر سے شدید صدمہ ہوا ہے، ہم دکھ اور غم کی اس گھڑی میں سوگوار خاندانوں اور اسلامی جمہوریہ ایران کے عوام کے ساتھ دلی تعزیت کا اظہار کرتے ہیں۔ 

یہ بھی پڑھیں: 30 مئی کو سپریم کورٹ میں میرا میچ ہے،بانی پی ٹی آئی 

وزیراعظم نے مزید کہا کہ ہماری تمام تر ہمدردیاں شہداءکے اہلِ خانہ اور ایرانی عوام کے ساتھ ہیں، پوری پاکستانی قوم مشکل کی اس گھڑی میں برادر ملک ایران کے ساتھ کھڑی ہے، مرحوم ایرانی صدر پاکستان کے عظیم دوست تھے، ان کے گزشتہ ماہ دورہ پاکستان کے دوران پاکستانی عوام کے ساتھ گزرے لمحات ہمیشہ یاد رکھے جائیں گے، وزیراعظم نے ایران کے نگران صدر عزت مآب ڈاکٹر محمد مخبر کے لئے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

Leave a Comment