معروف اداکار، صداکار، ہدایتکار طلعت حسین انتقال کر گئے

فائل فوٹو
فائل فوٹو

پاکستان کے معروف اداکار، صداکار و ہدایت کار طلعت حسین انتقال کر گئے، ان کی تدفین کراچی کے مقامی قبرستان میں کردی گئی۔

طلعت حسین کی نماز جنازہ میں شبیر جان، منور سعید، جاوید شیخ، سلیم شیخ، شہزاد رضا، نبیل سمیت دیگر اداکاروں نے شرکت کی۔

سابق صدر عارف علوی اور میئر کراچی مرتضیٰ وہاب سمیت دیگر معروف شخصیات بھی جنازے میں شریک تھیں۔

اس سے قبل  آرٹس کونسل کے صدر احمد شاہ سے طلعت حسین کی صاحبزادی نے والد کے انتقال کی تصدیق کی تھی۔

صدر کراچی آرٹس کونسل احمد شاہ کے مطابق طلعت حسین کافی روز سے کراچی کے نجی اسپتال کے آئی سی یو میں داخل تھے، وہ شروع سے ہی آرٹس کونسل کراچی کے رکن رہے ہیں اور وہ آرٹس کونسل کی گورننگ باڈی میں بھی شامل تھے۔

صدر آرٹس کونسل کراچی احمد شاہ نے کہا ہے کہ مرحوم طلعت حسین ایک بہترین انسان اور زبردست آرٹسٹ تھے، انہوں نے متعدد ملکی و غیر ملکی فلموں اور ڈراموں میں اداکاری کے جوہر دکھائے ہیں۔

طلعت حسین بھارت کے شہر دہلی میں 1940ء میں پیدا ہوئے تھے، انہوں نے فنون لطیفہ کو نصف صدی دی، ان کی عمر کا بیشتر حصہ اداکاری، صداکاری اور آرٹ میں گزرا۔

شاندار ڈراموں سے لے کر بصیرت انگیز تحریروں تک طلعت حسین کی خدمات نے پاکستان شوبز انڈسٹری میں ناقابلِ فراموش نشان چھوڑے ہیں، ان کے انتقال کی خبر سے پرستار غمزدہ ہیں اور سوشل میڈیا پر مداحوں کے پیغامات کا تانتا بندھ گیا ہے۔

پاکستان شوبز انڈسٹری سے وابستہ افراد نے سینئر اداکار کی وفات پر دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔

سیاسی رہنماؤں کا اظہارِ افسوس

گورنر سندھ کامران ٹیسوری نے لیجنڈ اداکار طلعت حسین کے انتقال پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اداکاری کی دنیا میں طلعت حسین کی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے بھی معروف اداکار طلعت حسین کے انتقال پر اظہارِ افسوس کیا اور کہا کہ ان کی فنی خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔

وفاقی وزیرِ داخلہ محسن نقوی نے کہا ہے کہ طلعت حسین ورسٹائل فنکار تھے، ان کے یادگار ڈرامے پرستار آج بھی نہیں بھولے۔

محسن نقوی نے کہا کہ طلعت حسین کے انتقال سے اداکاری کا خوبصورت دور ختم ہوا ہے۔

وزیراعلیٰ پنجاب مریم نواز نے طلعت حسین کی فنی خدمات کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ مرحوم فن اداکاری میں اپنی مثال آپ تھے۔

وزیرِ اطلاعات پنجاب عظمیٰ بخاری نے کہا ہے کہ طلعت حسین پاکستان کی شوبز انڈسٹری کا ایک بڑا نام تھے، پاکستان سمیت دنیا بھر میں طلعت حسین کے چاہنے والے آج افسردہ ہیں۔

چیئرمین سینیٹ یوسف رضا گیلانی نے کہا ہے کہ مرحوم طلعت حسین کی فنون لطیفہ کیلئے گراں قدر خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔

 یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ اللّٰہ تعالیٰ مرحوم کے درجات بلند کرے اور سوگواران کو صبر جمیل عطا کرے۔

علاوہ ازیں وفاقی وزیرِ اطلاعات عطا تارڑ نے بھی طلعت حسین کے انتقال پر اظہارِ افسوس کیا اور مرحوم کے اہلِ خانہ سے دلی تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کیا۔

انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ طلعت حسین نے اپنی آواز اور اداکاری سے ہر کردار کو زندہ کیا، مرحوم طلعت حسین ایک حقیقی استاد تھے۔

متحدہ قومی موومنٹ کے چیئرمین خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ دعا ہے اللّٰہ رب العزت طلعت حسین کو اپنے جوار رحمت میں جگہ عطا فرمائیں، اللّٰہ ان کے لواحقین اور چاہنے والوں کو صبرِ جمیل عطا فرمائیں۔

علاوہ ازیں چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری  نے کہا کہ طلعت حسین قوم کا اثاثہ تھے، اپنے منفرد فن و کردار کی وجہ سے وہ ہمیشہ دلوں میں زندہ رہیں گے۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ دعاگو ہوں اللّٰہ تعالیٰ طلعت حسین مرحوم کو اپنے جوار رحمت میں اعلیٰ مقام عطا فرمائے، مرحوم کے اہلخانہ کے غم میں برابر کا شریک ہوں، اللّٰہ انہیں صبر عطا کرے۔

Leave a Comment