Saturday, March 2, 2024
Online Free Business listing Directory to Grow your Sales
HomeLatest Breaking newsمسلم حکمرانوں نے غزہ کیلئے کوئی فرض ادا نہیں کیا جو ان...

مسلم حکمرانوں نے غزہ کیلئے کوئی فرض ادا نہیں کیا جو ان پر واجب ہے سراج الحق


(24 نیوز)امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہاہے کہ ہمارے مسلمان حکمرانوں نے غزہ کیلئے کوئی فرض ادا نہیں کیا جو ان پر واجب ہے،جب ہم پر تشدد ہورہا تھا اسوقت ترکی کے صدر اسرائیل کیخلاف مظاہرے کی قیادت کررہے تھے، امت مسلمہ کے حکمران کم از کم قاہرہ میں ایک اجلاس کرتے تمام مسلم ممالک کا ایک فوجی اجتماع بھی ہونا چاہیے تھا،اگر مسلمان ممالک کی جانب سے اتحاد کا مظاہرہ ہوتا تو یہ سب کچھ نہ ہوتا۔
اسلام آباد میں غزہ مارچ کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے سراج الحق نے کہا کہ آج انسانوں کا سمندر امریکا کو پیغام دے رہا ہے،اگر امریکہ اسرائیل کیساتھ کھڑا ہے تو ہم غزہ کے مسلمانوں کیساتھ کھڑے ہیں،غزہ کیلئے لبیک کے نعرے فلسطینی عوام کیلئے حوصلے کا ذریعہ ہیں، ان کاکہناتھا کہ امریکی نائب وزیر خارجہ نے پاکستان کے حکمران کو کال کی،امریکہ کو خطرہ تھا جیسے جماعت اسلامی امریکہ کے سفارت خانے پر قبضہ کرلے گی،ہمارے جماعت کے کارکنان پر تشدد کرکے امیر جماعت کے سینے پر لاٹھیاں ماری گئی ہیں، حکمران کس کو خوش کرنا چاہتے ہیں کس کو پیغام دینا چاہتے ہیں۔
امیر جماعت اسلامی نے کہاکہ 19 نومبر کو اگلا ملین مارچ لاہور میں ہوگا،جب تک اسرائیل کی دہشت گردی ختم نہیں ہوتی ہم اپنی تحریک کو جاری رکھیں گے، اسلام آباد کی فضاو¿ں میں غزہ کے شہداکی خوشبو محسوس کررہا ہوں، ہمارے مسلمان حکمرانوں نے غزہ کیلئے کوئی فرض ادا نہیں کیا جو ان پر واجب ہے،جب ہم پر تشدد ہورہا تھا اسوقت ترکی کے صدر اسرائیل کیخلاف مظاہرے کی قیادت کررہے تھے۔
انہوں نے کہاکہ اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل نے اقرار کیا ہے فلسطین پر اسرائیل نے قبضہ کیا ہوا ہے ،اسرائیل کے محاصرے میں آج تک لاکھوں لوگ شہید ہوچکے ہیں ،اسرائیل ہسپتالوں، سکولز، سمیت ہر جگہ بمباری کررہا ہے،میں سوال کرتا ہوں اگر آج کے دور میں حضرت علی رضی اللہ عنہ یا حضرت عمر رضی اللہ ہوتے تو انکا کیا فیصلہ ہوتا؟ وی فیصلہ کرتے کہ غزہ کے شہداکا ساتھ دیا جائے۔
امیر جماعت اسلامی نے کہاکہ حکمرانوں کا کام غزہ کی عوام کا ساتھ دینا ہے انکو اسلحہ پہنچانا ہے، امت مسلمہ کے حکمران کم از کم قاہرہ میں ایک اجلاس کرتے تمام مسلمانوں ممالک کا ایک فوجی اجتماع بھی ہونا چاہیے تھا،اگر مسلمان ممالک کیجانب سے اتحاد کا مظاہرہ ہوتا تو یہ سب کچھ نہ ہوتا، ہمارے حکمران خوف میں مبتلا ہیں بزدل ہیں، خواتین اداکاروں نے فلسطینیوں کا ساتھ دینے کا اعلان کیا مگر ہمارے حکمرانوں کو دم نہیں ہے۔
سراج الحق نے کہاکہ حکمران امریکی غلامی یا اللہ میں سے کسی ایک کا انتخاب کریں، اگر حکمرانوں نے غزہ کا ساتھ نہ دیا تو ہمارے ہاتھ اور انکے گریبان ہوں گے، ان کا کہناتھا کہ امریکہ نے صدام کو عید کے دن پھانسی دی، کیا حکمران چاہتے ہیں انکا حشر رضا شاہ پہلوی جیسا ہو جائے،یہ سب وہ لوگ تھے جو امریکہ کے اشارے پر چلتے تھے، ہمیں صلاح الدین ایوبی، محمود احمد غزنوی کی ضرورت ہے۔
ان کاکہناتھا کہ پاکستان کے کروڑوں نوجوان غزہ جانے کیلئے تیار ہیں، کسی کے جھوٹے پروپیگنڈہ میں مت آنا،سب سے بڑا پروپیگنڈہ ہے کہ امریکہ ناقابل شکست ہے، مجاہدین نے وعدہ کیا ہے کہ وہ فرض نمازوں کی قضا مسجد اقصٰی میں ادا کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں: پی ٹی آئی کو ابتک کا بڑا جھٹکا، سابق رکن قومی اسمبلی ن لیگ میں شامل





Source link

RELATED ARTICLES

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

Recent Comments