Saturday, February 24, 2024
Online Free Business listing Directory to Grow your Sales
HomeLatest Breaking newsعمران خان کیخلاف توشہ خانہ کیس کا فیصلہ آج دوپہر 2 بجے...

عمران خان کیخلاف توشہ خانہ کیس کا فیصلہ آج دوپہر 2 بجے سنائے جائیگا


(24 نیوز) الیکشن کمیشن آف پاکستان عمران خان کے خلاف توشہ خانہ کیس کا فیصلہ آج دوپہر 2 بجے سنائے گا۔ چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کی سربراہی میں 5 رکنی کمیشن فیصلہ سنائے گا۔ الیکشن کمیشن نے تمام فریقین کو نوٹسز جاری کر دیئے، عمران خان سمیت دیگر فریقین کو بھی نوٹسز جاری کئے گئے۔ الیکشن کمیشن نے 19 ستمبر کو توشہ خانہ ریفرنس پر فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

الیکشن کمیشن کی سیکورٹی بڑھا دی گئی۔ ایس ایس پی کی نگرانی میں سیکورٹی تعینات کر دی گئی۔ ایک ایس ایس پی، 5 ایس پیز، 6 ڈی ایس پی سمیت ساڑھے گیارہ سو اہلکار تعینات کئے گئے جبکہ پولیس کے ساتھ ایف سی اور رینجرز کے اہلکار بھی فرائض سرانجام دے رہے ہیں۔ الیکشن کمیشن کی جانب سے خدشہ نقص امن ظاہر کیا گیا تھا۔ الیکشن کمیشن کے خدشات کی بدولت سیکورٹی ہائی الرٹ کی گئی۔

واضح رہے عمران خان نے توشہ خانہ ریفرنس کے سلسلے میں 7 ستمبر کو الیکشن کمیشن میں اپنا تحریری جواب جمع کرایا تھا، جواب کے مطابق یکم اگست 2018 سے 31 دسمبر 2021 کے دوران وزیر اعظم اور ان کی اہلیہ کو 58 تحائف دیے گئے۔

بتایا گیا کہ یہ تحائف زیادہ تر پھولوں کے گلدان، میز پوش، آرائشی سامان، دیوار کی آرائش کا سامان، چھوٹے قالین، بٹوے، پرفیوم، تسبیح، خطاطی، فریم، پیپر ویٹ اور پین ہولڈرز پر مشتمل تھے البتہ ان میں گھڑی، قلم، کفلنگز، انگوٹھی، بریسلیٹ/لاکٹس بھی شامل تھے۔

جواب میں بتایا کہ ان سب تحائف میں صرف 14 چیزیں ایسی تھیں جن کی مالیت 30 ہزار روپے سے زائد تھی جسے انہوں نے باقاعدہ طریقہ کار کے تحت رقم کی ادائیگی کر کے خریدا۔ اپنے جواب میں عمران خان نے اعتراف کیا تھا کہ انہوں نے بطور وزیر اعظم اپنے دور میں 4 تحائف فروخت کیے تھے۔

سابق وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ انہوں نے 2 کروڑ 16 لاکھ روپے کی ادائیگی کے بعد سرکاری خزانے سے تحائف کی فروخت سے تقریباً 5 کروڑ 80 لاکھ روپے حاصل کیے، ان تحائف میں ایک گھڑی، کفلنگز، ایک مہنگا قلم اور ایک انگوٹھی شامل تھی جبکہ دیگر 3 تحائف میں 4 رولیکس گھڑیاں شامل تھیں۔

خیال رہے قومی اسمبلی کے سپیکر راجا پرویز اشرف نے اگست کے اوائل میں توشہ خانہ کیس کی روشنی میں عمران خان کی نااہلی کے لیے الیکشن کمیشن کو ایک ریفرنس بھیجا تھا۔

ریفرنس میں کہا گیا تھا کہ عمران خان نے اپنے اثاثوں میں توشہ خانہ سے لیے گئے تحائف اور ان تحائف کی فروخت سے حاصل کی گئی رقم کی تفصیل نہیں بتائی۔

اپریل کے آغاز میں سابق وزیراعظم نے توشہ خانہ میں ملنے والے تحائف کے تنازع پر ایک غیر رسمی میڈیا گفتگو کے دوران جواب دیتے ہوئے کہا تھا کہ یہ ان کے تحفے ہیں اور یہ ان کی مرضی ہے کہ انہیں رکھنا ہے یا نہیں۔





Source link

RELATED ARTICLES

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

Recent Comments