Saturday, March 2, 2024
Online Free Business listing Directory to Grow your Sales
HomeLatest Breaking newsصحافی ارشد شریف کینیا میں قتل، ’میں نے دوست اور شوہر کھو...

صحافی ارشد شریف کینیا میں قتل، ’میں نے دوست اور شوہر کھو دیا‘


ارشد شریف کو 2019 میں صحافت میں ان کی خدمات کی بنا پر پرائیڈ آف پرفارمنس ایوارڈ ملا تھا۔ (فائل فوٹو: ٹوئٹر)

پاکستان کے معروف اینکرپرسن ارشد شریف کو کینیا میں گولی مار کر قتل کر دیا گیا ہے۔
پیر کی صبح ارشد شریف کی اہلیہ جویریہ صدیق نے ایک ٹویٹ میں ان کی موت کی تصدیق کی۔
انہوں نے کہا کہ ’آج میں نے ایک دوست، شوہر اور اپنا پسندیدہ صحافی کھو دیا ہے۔ پولیس کے مطابق انہیں کینیا میں گولی ماری گئی۔‘
جویریہ صدیق نے درخواست کی ہے کہ ’براہ مہربانی ہماری نجی زندگی کا احترام کریں اور بریکنگ کے نام پر ہمارے خاندان کی تصاویر، ذاتی معلومات اور ان (ارشد شریف) کی ہسپتال سے آخری تصاویر شیئر نہ کریں۔‘
 اسلام آباد ہائی کورٹ نے سیکریٹری داخلہ اور سیکریٹری خارجہ کو ارشد شریف کی فیملی سے فوری رابطہ کرنے کا حکم دیا ہے۔
عدالت عالیہ نے ارشد شریف کی میت پاکستان لانے کے اقدامات اٹھانے کا حکم دیتے ہوئے منگل تک رپورٹ بھی طلب کر لی ہے۔
دفتر خارجہ کے ترجمان عاصم افتخار کا کہنا ہے کہ ’کینیا میں پاکستانی ہائی کمیشن کینیئن حکام سے واقعے کی تفصیلات حاصل کر رہا ہے۔‘
صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے ارشد شریف کی وفات پر دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔
پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین اور وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے بھی صحافی ارشد شریف کے قتل پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔
پاکستان پیپلزپارٹی کی جانب سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ ارشد شریف کا قتل پاکستان کی صحافی برادری کے لئے ناقابل تلافی نقصان ہے۔
وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ ارشد شریف کے قتل کے معاملے میں وزارت خارجہ کینیا کے حکام سے رابطے میں ہے۔
وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے بھی افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ واقعے سے متعلق حقائق جاننے کے لیے کینیا کی حکومت سے رابطے میں ہیں۔
انہوں نے کہا کہ نیروبی میں موجود پاکستانی سفارت خانہ ارشد شریف کے معاملے میں مکمل معاونت کر رہا ہے۔
ارشد شریف پی ٹی آئی رہنما شہباز گل کی گرفتاری کے بعد ملک چھوڑ کر چلے گئے تھے۔ وہ طویل عرصے تک اے آر وائی نیوز سے وابستہ رہے جہاں وہ ’پاور پلے‘ کے نام سے پروگرام کرتے تھے۔
ان کے ملک سے جانے کے بعد ان کے ادارے نے ایک بیان میں کہا تھا کہ ’ارشد شریف کا ادارے سے اب کوئی تعلق نہیں ہے۔‘
اے آر وائی نیوز کے سی ای او سلمان اقبال نے ایک ٹویٹ میں ارشد شریف کی وفات پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ ’مجھے ابھی بھی یقین نہیں آرہا ہے۔ میرے پاس الفاظ نہیں ہیں۔‘
ارشد شریف کو 23 مارچ 2019 میں صحافت میں ان کی خدمات کی بنا پر صدر پاکستان سے پرائیڈ آف پرفارمنس ایوارڈ ملا تھا۔





Source link

RELATED ARTICLES

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

Recent Comments