بیرسٹر سیف وکیل ہیں ڈاکٹر نہیں، ہر معاملے پر طبع آزمائی نہ کریں، عظمیٰ بخاری

بیرسٹر سیف وکیل ہیں ڈاکٹر نہیں، ہر معاملے پر طبع آزمائی نہ کریں، عظمیٰ بخاری

یلوزیر اطلاعات پنجاب عظمیٰ بخاری نے کہا ہے کہ بیرسٹر سیف وکیل ہیں ڈاکٹر نہیں، ہر معاملے پر طبع آزمائی نہ کریں۔

بیرسٹر سیف کے بیان پر ردعمل میں عظمیٰ بخاری نے کہا کہ ڈاکٹر عاصم کی سربراہی میں 4 رکنی میڈیکل وفد کہہ چکا کہ بشریٰ بی بی کو زہر نہیں دیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ بشری بی بی نےکہا مجھے واش روم کلینر کے قطرے دیے گئے، پوچھتی ہوں کہ بیرسٹر سیف کو الہام ہوا کہ بشریٰ بی بی کو زہر دیا گیا؟

وزیر اطلاعات پنجاب نے مزید کہا کہ محترم آپ وکیل ہیں ڈاکٹر نہیں، آپ کے جھوٹے بیانات کی بجائے میڈیکل وفد کی رائے زیادہ اہمیت رکھتی ہے۔

اُن کا کہنا تھا کہ برائے مہربانی ہر معاملے میں طبع آزمائی نہیں کرتے، میڈیکل بورڈ نے بشری بی بی کو کچھ ٹیسٹ لکھ کردیے تھے جو انہوں نے نہیں کروائے۔

عظمیٰ بخاری نے یہ بھی کہا کہ ایسے بیہودہ اور مظلومیت کارڈ کھیلنے سے آپ کی چوریوں پر پردہ نہیں ڈالا جاسکتا۔

انہوں نے کہا کہ بشریٰ بی بی آج بھی اپنے بیڈ روم میں بیٹھ کر سزا پوری کر رہی ہے، فتنہ فساد پارٹی کو پروپیگنڈے کرنے کے علاوہ کوئی کام ہی نہیں ہے۔

وزیر اطلاعات پنجاب نے کہا کہ کے پی کے میں اتنے ہی اچھے ڈاکٹرز ہیں تو وہاں سے اپنا اور اپنے وزیراعلی کا علاج کروائیں۔

Leave a Comment