ایرانی صدر کے انتقال پر پاکستان میں قومی پرچم سرنگوں

ایرانی صدر کے انتقال پر پاکستان میں قومی پرچم سرنگوں

ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کا ہیلی کاپٹر حادثے میں انتقال پر ملک بھر میں سوگ کے اعلان کے بعد پاکستانی سرکاری عمارات پر قومی پرچم سرنگوں کردیا گیا۔

پاکستانی وزیر اعظم شہباز شریف نے ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کی شہادت پر اظہار افسوس کرتے ہوئے ملک بھر میں یوم سوگ اور پرچم سرنگوں رکھنے کا اعلان کیا ہے۔

صدرآصف زرداری نے بھی ایرانی صدر کی حادثے میں وفات پر صدمے اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ایکس پر بیان جاری کرتے ہوئے وزیر اعظم شہباز شریف نے حکومتِ پاکستان اور عوام کی جانب سے ابراہیم رئیسی کی موت پر اظہار تعزیت پیش کیا۔

انہوں نے پاکستانی حکومت اور عوام کی جانب سے اظہارِ تعزیت کرتے ہوئے کہا کہ ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کے ہیلی کاپٹر کو حادثہ پیش آنے کے بعد ہم پُر امید تھے کہ کوئی اچھی خبر موصول ہوگی لیکن افسوس ایسا نہیں ہوسکا، جس پر ہم دل کی گہرائیوں سے افسردہ ہیں۔

انہوں نے دعا گو ہوتے ہوئے کہا کہ اللہ تعالیٰ شہدا کو جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام اور ان کے اہل خانہ و ایرانی قوم کو اس سانحے پر صبر جمیل عطا فرمائے۔

ایرانی صدر کے انتقال پر پاکستان میں قومی پرچم سرنگوں

وزیر اعظم شہباز شریف نے مرحوم ابراہیم رئیسی کے گزشتہ ماہ پاکستانی دورے کو یاد کرتے ہوئے اسے تاریخی قرار دیا۔

ان کا کہنا ہے کہ پاکستان کو ایرانی صدر ابراہیم رئیسی اور وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان کی شہادت سے تقریباً ایک ماہ قبل ان کی میزبانی کرنے کا تاریخی موقع حاصل ہوا۔

انہوں نے ملک بھر میں یوم سوگ منانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ وہ پاکستان کے بہت اچھے دوست تھے، اس دُکھ کی گھڑی میں برادر ملک ایران سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے آج ملک بھر میں ایرانی صدر و وزیر خارجہ کی وفات پر یوم سوگ منایا جائے گا اور شہدا کے احترام میں پرچم سرنگوں رکھا جائے گا۔

دفترِ خارجہ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ ایرانی صدرابراہیم رئیسی، ایرانی وزیرخارجہ کی شہادت پر حکومتِ پاکستان اورعوام اس دکھ اورغم کی گھڑی میں ایرانی عوام کے ساتھ دلی تعزیت کا اظہار کرتے ہیں

ان کا کہنا ہے کہ ہماری دعائیں شہدا کے اہل خانہ اور اسلامی جمہوریہ ایران کے عوام کے ساتھ ہیں، سوگ کی اس گھڑی میں ہم اپنے ایرانی بھائیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہیں۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ ابراہیم رئیسی اور وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان قابل احترام رہنما تھے، ایرانی صدر کی پاک ایران تعلقات،علاقائی تعاون کے لیے خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔

ایرانی صدر کے انتقال پر پاکستان میں قومی پرچم سرنگوں

دفترِ خارجہ کا کہنا ہے کہ صدرابراہیم رئیسی نے دو طرفہ تعلقات مستحکم کرنے کے لیے اپریل میں پاکستان کا دورہ کیا، پاکستان ایران کے ساتھ دوستی اور تعاون آگے بڑھانے کے اپنے عزم کا اعادہ کرتا ہے۔

صدرِ مملکت آصف علی زرداری نے ایرانی صدر کی حادثے میں وفات پر صدمے اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔

انہوں نے  ایرانی صدر، وزیرِ خارجہ اور دیگر جاں بحق افراد کے سوگواران سے اظہارِ تعزیت پیش کی۔

انہوں نے مسلم امہ کے لیے ابراہیم رئیسی کی خدمات کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ ایرانی صدر کا انتقال نہ صرف ایران بلکہ مسلم امہ کے لیے بڑا نقصان ہے۔ ابراہیم رئیسی امتِ مسلمہ کے اتحاد کے بڑے حامی تھے، وہ فلسطینی، کشمیری عوام سمیت مسلمانوں کا درد رکھتے تھے۔

 صدرِ مملکت کا کہنا ہے کہ آج پاکستان اپنے عظیم دوست کو کھو دینے پر سوگوار ہے، گزشتہ ماہ ہمیں ان کی پاکستان میں میزبانی کا اعزاز حاصل ہوا۔ 

ان کا کہنا ہے کہ ابراہیم رئیسی کی خدمت کو ایران ، پاکستان اور عالمِ اسلام میں یاد رکھا جائےگا، اللہ تعالیٰ ایران کے عوام اور ابراہیم رئیسی کے اہلخانہ کو صبر و استقامت عطا فرمائے۔

گورنر پنجاب سردار سلیم حیدر خان نے  ایرانی صدر کے ہیلی کاپٹر حادثے میں جاں بحق پر اظہار تعزیت کرتے ہوئے کہا کہ ان کی شہادت پر دل کی گہرائیوں سے افسردہ ہیں، ہم دکھ کی اس گھڑی میں ایرانی حکومت اور عوام کے ساتھ ہیں۔

Leave a Comment