امریکا جمہوریت کیلئے اپنا 100 سالہ ریکارڈ دیکھے، خواجہ آصف

وزیر دفاع خواجہ آصف نے امریکا کو جمہوریت سے متعلق اپنا 100 سالہ ریکارڈ دیکھنے کا مشورہ دے دیا۔

جیو نیوز سے گفتگو میں خواجہ آصف نے امریکی ایوان نمائندگان کی قراردادپر ردعمل دیا اور کہا کہ امریکا سپر پاور ہے، اُسے یہ چیزیں زیب نہیں دیتیں۔

انہوں نے کہا کہ امریکا میں یہ الیکشن کا سال ہے، 2020ء کےانتخابات میں بائیڈن منتخب ہوا تو ٹرمپ نے نتائج ماننے سے انکار کیا۔

خواجہ آصف نے مزید کہا کہ امریکا پہلے اپنے انتخابات کو شفاف بنائے پھر دوسروں پر الزام لگائے۔

ان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی اس وقت امریکا میں بہت متحرک ہے، جس نے اکسا کر پاکستان کے خلاف قرارداد منظور کروائی۔

وزیر دفاع نے یہ بھی کہا کہ اس بارے میں پی ٹی آئی سے پارلیمنٹ میں اور عوام کی عدالت میں پوچھ سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ امریکا سے پوچھتا ہوں پچھلے 100 سال میں کتنی جمہوری حکومتوں کا تختہ الٹا ہے؟ واشنگٹن نے کتنے فوجی انقلابات کی سرپرستی کی ہے؟

خواجہ آصف نے کہا کہ ویتنام، جنوبی امریکا اور مشرق وسطی میں کروڑوں افراد اپنی جان سے گئے، ہنستے بستے معاشروں کو اجاڑ دیا گیا، لیبیا، عراق، شام جیسے ممالک اجڑ گئے۔

ان کا کہنا تھا کہ آج کل فلسطینیوں کا جو قتل عام ہو رہا ہے، اس کا سب سے بڑا سہولت کار امریکا ہے۔

وزیر دفاع نے کہا کہ پاکستان سے متعلق اس قسم کے مطالبات سے پہلے امریکا کو جمہوریت کے لیے اپنا 100 سالہ ریکارڈ دیکھنا چاہیے۔

Leave a Comment