Monday, February 6, 2023
Online Free Business listing Directory to Grow your Sales
HomeLatest Breaking newsآرمی چیف کا دورہ سعودی عرب، ’دونوں ممالک کے درمیان گہرے برادرانہ...

آرمی چیف کا دورہ سعودی عرب، ’دونوں ممالک کے درمیان گہرے برادرانہ تعلقات ہیں‘


آرمی چیف کا دورہ سعودی عرب، ’دونوں ممالک کے درمیان گہرے برادرانہ تعلقات ہیں‘ 1665821 935095696

آرمی چیف  بننے کے بعد جنرل عاصم منیرکا یہ پہلاغیرملکی دورہ ہے۔ (فوٹو: ایس پی اے)
پاکستان کے دفتر خارجہ نے کہا  ہے کہ آرمی چیف جنرل عاصم نصیر کا دورہ سعودی عرب دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو فروغ دینے کے تناظر میں کیا گیا ہے جس میں دفاعی شعبہ بھی شامل ہے۔
جمعرات کو اسلام آباد میں دفتر خارجہ کی ترجمان ممتاز زہرہ نے ہفتہ وار بریفنگ کے دوران کہا کہ پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان گہرے برادرانہ تعلقات ہیں۔
انہوں نے مزید کہا کہ ’سعودی عرب کے ساتھ ہمارے تعلقات کثیرجہتی ہیں جن میں دفاع کا شعبہ بھی شامل ہے۔‘
پاکستان کے آرمی چیف جنرل عاصم منیر نے سعودی وزیر دفاع شہزادہ خالد بن سلمان سے ریاض میں ملاقات کی ہے۔
سرکاری خبر رساں ایجنسی ایس پی اے کے مطابق سعودی وزیر دفاع نے جنرل عاصم منیر کو پاکستانی فوج کا سربراہ بننے پر مبارکباد دی۔
یاد رہے آرمی چیف بننے کے بعد جنرل عاصم منیرکا یہ پہلا غیرملکی دورہ ہے۔
ملاقات کے دوران دونوں برادر ملکوں کے دوطرفہ تعلقات کی مضبوطی اور پائیداری پر زور دیا گیا۔ فوجی اور دفاعی تعاون بڑھانے اور سپورٹ دینے کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا گیا۔
مشترکہ تشویش کے اہم ترین علاقائی اور بین الاقوامی امور پر بھی بات چیت کی گئی۔
اس موقع پر سعودی عرب کی فوج کے سربراہ اور دیگر حکام بھی موجود تھے۔
سعودی وزیر دفاع شہزاد خالد بن سلمان نے ٹویٹ کی کہ ’پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل عاصم منیر سے ملاقات کرکے خوشی ہوئی۔‘
’ہم نے اپنے برادر ملکوں کے درمیان سٹریٹیجک پارٹنرشپ پر زود دیا۔ دوطرفہ فوجی اور دفاعی تعلقات کا جائزہ لیا اور اپنے تعاون کو مضبوط بنانے کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا۔‘
پاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) نے کہا ہے کہ فوج کے سربراہ جنرل عاصم منیر سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے سرکاری دورے پر ہیں جو چار سے 10 جنوری تک جاری رہے گا۔
جمعرات کو آئی ایس پی آر کی جانب سے پریس ریلیز میں بتایا گیا ہے کہ جنرل عاصم منیر دونوں ممالک کی سینیئر قیادت کے ساتھ ملاقاتیں کریں گے جن میں باہمی دلچسپی، فوج تعاون، دو طرفہ تعلقات اور سلامتی سے متعلق امور پر بات چیت ہو گی۔





Source link

RELATED ARTICLES

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

Recent Comments